کراچی کے حلقہ این اے 246 میں انتخابی مہم

Discussion in 'PTI' started by ghazi52, Apr 21, 2015.

  1. ghazi52

    ghazi52 Senior Member Siasi Karkun

    Joined:
    Apr 20, 2006
    Messages:
    786
    Likes Received:
    1
    Gender:
    Male
    Location:
    USA
    کراچی کے حلقہ این اے 246 میں انتخابی مہم کا وقت ختم، پولنگ 23 اپریل کو ہوگی


    [​IMG]
    کسی بھی گڑبڑی کی نگرانی کے لئے حلقے میں کیمرے بھی نصب کردیئے گئے. فوٹو:فائل

    کراچی: قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 246 میں انتخابی مہم کا وقت ختم ہوگیا جب کہ 3 دن کے لئے شہر بھر میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر بھی پابندی لگا دی گئی ہے۔

    ایکسپریس نیوز کے مطابق قومی اسمبلی کے حلقے این اے 246 میں 23 اپریل کو ہونے والے ضمنی انتخاب کے لئے انتخابی مہم کا وقت ختم ہوگیا ہے جس کے بعد جلسے، کارنرمیٹنگز اور ریلیوں پر پابندی ہوگی اور کسی بھی امیدوار کو الیکشن مہم چلانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے تمام پولنگ اسٹیشنز میں بیلٹ باکس پہنچادیئے گئے ہیں جب کہ پولنگ اسٹیشنز کے اندر خفیہ کیمرے بھی نصب کردیئے گئے ہیں۔

    حلقے میں دھاندلی کی روک تھام کے لئے تمام پولنگ اسٹیشنز کے اندر اور باہر رینجرز اہلکار تعینات ہوں گے جب کہ ضمنی انتخاب کے دوران پولنگ اسٹیشن میں موبائل فون استعمال کرنے پر پابندی ہوگی، پولنگ اسٹیشن میں پریزائیڈنگ آفیسر کے علاوہ عملے کے کسی بھی شخص کے لیے موبائل فون کا استعمال ممنوع ہوگا اور ووٹرز زائد المعیاد شناختی کارڈ پر بھی ووٹ ڈال سکیں گے۔ الیکشن کمیشن کے اعلامیے کے مطابق پولنگ کے روز حلقے میں وفاقی و صوبائی ملازمین کے لیے عام تعطیل ہوگی اور حلقہ لوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ ہوگا۔

    این اے 246 کے ضمنی انتخاب کی دلچسپ بات یہ ہے کہ ایم کیو ایم، تحریک انصاف اور جماعت اسلامی کے امیدواروں کا ووٹ حلقے میں رجسٹرڈ ہی نہیں، متحدہ قومی موومنٹ کے امیدوار کنور نوید جمیل کا ووٹ حیدرآباد جب کہ تحریک انصاف کے امیدوار عمران اسماعیل کا ووٹ ڈیفنس اور جماعت اسلامی کے راشد نسیم کا ووٹ نارتھ ناظم آباد میں رجسٹرڈ ہے۔

    واضح رہے کہ متحدہ قومی موومنٹ کے ٹکٹ پر منتخب ہونے والے رکن قومی اسمبلی نبیل گبول کے استعفیٰ کے بعد یہ نشست خالی ہوئی تھی۔
     

Share This Page